آہ

ایک روز اچانک

وہ سرِ راہ ملی تو

میرے ٹوٹے دل سے

اک آہ نکلی تو

میں نے اس سے پوچھا

بتا کیسی ھے تو

رو پڑی وہ دکھا کے مجھے

اپنے ھاتھوں کی مہندی

Advertisements

7 تبصرے »

  1. Green Head said

    Mehndi ka rang sahi nahi aaya ho ga..lolz.

    Visited this ‘Nice’ place first time. keep it up.

  2. آہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

  3. Ali Faraz said

    Safe Guard sey haath dhula do!!!

  4. میں کئی بار پہلے بھی آپ کی بیاض پڑھ چکا ہو ۔ آپ کی تحریر پڑھ کر مسکراتا ہوں اور چلا جاتا ہوں ۔

    ڈنکی ایک چھوٹے ریلوے انجن کا نام تھا پھر کوئی پینتیس سال قبل پریسیژن کاسٹنگ سے چھوٹے چھوٹے پیارے پیارے کھلونے بنائے گئے اور ان کا نام ڈنکی رکھا گیا ۔ یعنی چھوٹا سا سمارٹ اور پیارا ۔ یہ آپ تو ہو سکتے ہیں آپ کا دماغ نہیں ۔

  5. This post has been removed by the author.

  6. T M said

    ajeeb dastaan hai ye
    kahan shruu kahan khatam

    ye manzilain hain konsi
    na wo samajh sakei na hu

    mubarakain tumhain kei tum

    kisi kai noor ho gayee
    kissi kai itnai pass ho

    kai sab sai door ho gayee

    ye roshni kai sath kioon

    dhuan utha charagh sa
    🙂

  7. Asma Mirza said

    😀

    so sad for her :((

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: