برسوں کے بعد

برسوں کے بعد ديکھا شخص دلربا سا
اب ذہن ميں نہيں ہے پر نام تھا بھلا سا

ابرو کِھچھے کِھچھے سے آنکھيں جھکي جھکي سي
باتيں رکي رکي سي، لہجہ تھکا تھکا سا

الفاظ تھے کہ جگنو آواز کے سفر ميں
بن جائے جنگلوں ميں جس طرح راستہ

خوابوں ميں خواب اس کے، يادوں ميں ياد اس کي
نيندوں ميں گھل گيا ہو جيسے کہ رتجگا سا

پہلے بھي لوگ آئے کتنے ہي زندگي ميں
وہ ہر طرح سے ليکن اوروں سے تھا جدا سا

اگلي محبتوں نے وہ نامرادياں ديں
تازہ رفاقتوں سے دل تھا ڈرا ڈرا سا

احمد فراز

Advertisements

5 تبصرے »

  1. urdudaaN said

    محترمہ، بہترین کلام ھے۔
    آپ ي کی بجائے ی استعمال کرنے کی کوشش کریں تو اور مزہ آجائے۔

  2. urdudaaN said

    پہلے ی کے نیچے دو نقطے ھوتے ھیں، جبکہ دوسرے کے نیچے نہیں۔ یہ نقطے
    tahoma font
    میں دیکھے جاسکتے ھیں۔

  3. Asma said

    والسلام،

    شکریہ تو احمد فراز کا ہے نا۔ مجھے خود یہ دو نقطوں والی ی نہیں پسند لیکن کچھ دنوںسے بیاض پہ ی ایسے آ رہی ہے، دیکھیں کچھ کرتی ہی ہوں۔

    آتے رہا کریں اور یوں چیزوں کی اصلاح ضرور کر دیا کریں۔

    شکریہ

  4. sanai said

    "bin jayee jangaloo mein” key akhir mein "saa” missing hai

  5. Asma said

    Oh i’m sorry es that’s a typing error

    thanks for mentioning 🙂

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: