جی جان سے اے ارضِ وطن مان گئے ہم

جی جان سے اے ارضِ وطن مان گئے ہم

جب تو نے پکارا ترے قربان گئے ہم

جو دوست ہو اس پہ محبت کی نظر کی

دشمن پہ ترے صورتِ طوفان گئے ہم

ہم ایسے وفادار و پرستار ہیں تیرے

جو تو نے کہا تیرا کہا مان گئے ہم

مرہم ہیں ترے ہونٹ مسیحا ہے تری زُلف
ہم موجہِ گل تھے کہ پریشان گئے ہم

افسوں نہ کوئی چلنے دیا حیلہ گراں کا

ہر شکل عدو کی ترے پہچان گئے ہم

خاکِ شہدائ نے ترے پرچم کو دعا دی

لہرا کے جو پرچم نے کہا جان گئے ہم

۔۔۔ عبیداللہ علیم ۔۔۔ ١٩٦٥ ۔۔۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: