سزائے موت کا مژدہ

یہ وہ ساحر ہے جن کے ہاتھ میں ہم سب کی جانیں ہیں
یہاں سورج کے قاتل کو عدالت چھوڑ دیتی ہے
سزائے موت کا مژدہ
نہ کوئی قید ہوتی ہے
جو سورج کو قتل کرتا ہے اس کو روشنی
تقسیم کرنے کی وزارت سونپ دیتے ہیں
یہ تاریکی کے سوداگر ہیں
سورج بلیک کرتے ہیں
انہیں ضد ہے ہوائیں، روشنی اور خواب خود بانٹیں
یہ موسم قرض دیتے ہیں
انہیں معلوم ہے کس کو کہاں مصروف رکھنا ہے
کسے آزاد رکھنا ہے
کہاں یہ جبر کا موسم، کہاں رت ہو حکومت کی
یہ ساحر بند کمروں میں یہی اجلاس کرتے ہیں

۔۔۔ طلعت اخلاق ۔۔۔

Advertisements

1 تبصرہ »

  1. urdudaaN said

    محترمہ!
    السلامُ علیکم و رَحمتُہ اللّہ ِ و برکاتُہ

    میں سچ مچ اس معلومات کیلئے آپ کا تہہ ِ دل سے شکریہ ادا کرتا ھوں۔ آپ نے ابنِ انشاء کی تصنیفات کے بارے میں جامع معلومات فراھم کیں۔
    پہلے تو میں یہ سمجھا تھا کہ شاید میں نے کچھ ذیادہ کی مانگ کرلی تھی، یا شاید آپ بھول گئی تھیں۔
    انشاء اللّہ، ابن ِ انشاء کو پڑھ کر آپ کو تاثرات سے آگاہ کروں گا۔–>

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: