میرا جنون، میری وفا

کبھی کبھی میں جیتی بازی ہار جاتا ھوں
مسافر ھوں منز ل سے منہ موڑ جاتا ھوں

شبنم کے موتی قطرہ قطرہ جس میں جمع کیۓ
صبح ہوتے ہی اکثر میں وہ پیالا توڑ جاتا ھوں

وہ جس کے دیدار کی خاطر سویا نہیں تھا اب تک
آج اس کے آنے پہ میں وہ شہر ہی چھوڑ آیا ھوں

وہ جس کے نقوش سنوارتے، بیتے کئ دن
بگڑے ہونٹوں کو مسکان دی
یوں ہی بیتے کئ موسم
وہ مورت بھی میں اکثر ادھوری چھوڑ آتا ھوں
میں منہ موڑ جاتا ھوں

Advertisements

3 تبصرے »

  1. Asma said

    Assalamoalaykum !!

    Welcome to bayaaz … and a nice start 🙂

  2. Awww gee thanks, it was nothing 🙂
    hehe.
    btw i can’t see my name in the ‘Arakeen’ list bhai 🙂

  3. Asma said

    Lolz … great reminder … I’m very sust you know … 🙂

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: