جہل کا نچوڑ


میں نے اس سے یہ کہا

 

یہ جو دس کروڑ ہیں

 

جہل کا نچوڑ ہیں

 

ان کی فکر سو گئی

 

ہر امید کی کرن

 

ظلمتوں میں کھو گئی

 

یہ خبر درست ہے

 

ان کی موت ہوگئی

 

بے شعور لوگ ہیں

 

زندگی کا روگ ہیں

 

اور تیرے پاس ہے

 

ان کے درد کی دوا

 

 

حبیب جالب کی یہ نظم کچھ حسبِ موقع لگی ہے۔

Advertisements

1 تبصرہ »

  1. اجمل خان said

    زبردست شاعری ہے

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: