انتظار

 

 

کچھ قسمیں تم بھی بھول گئے

 

کچھ وعدے ہم بھی توڑ گئے

 

یوں ساتھ بھی کب تک چلتے تم

 

اک موڑ پہ آکے چھوڑ گئے

 

سب رستے دھندلے رستے ہیں

 

پر اب بھی ہم اس موڑ پہ کھڑے

 

خالی دل خالی جان لئے

 

ہم آج بھی تم کو تکتے ہیں

 

 

 

۔۔۔ ضیاء عثمانی کی “کھو نہ جانا“ سے ۔۔۔

 

 

Advertisements

4 تبصرے »

  1. اجمل said

    محبتوں کے قدر داں نہ شہر میں نہ گاؤں میں

  2. Doctimes said

    بہت خوب

  3. Asma said

    Thanks to the poet :>

    Thanks for coming by :>

  4. very beautiful

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: