خواب مرتے نہیں

خواب مرتے نہیں


خواب دل ہیں نہ آنکھیں

نہ سانسیں کہ جو

ریزہ ریزہ ہوئے تو بکھر جائیں گے

جسم کی موت سے بھی یہ نہ مر جائیں گے

خواب مرتے نہیں

خواب تو روشنی ہیں

نوا ہیں

ہوا ہیں

جو کالے پہاڑوں سے رکتے نہیں

ظلم کے دوزخوں سے پُھکتے نہیں

روشنی اور نوا اور ہوا کے عَلَم

مقتلوں میں پہنچ کر بھی جھکتے نہیں

خواب تو حرف ہیں

خواب تو نور ہیں

خواب تو منصور ہیں


خواب مرتے نہیں

احمد فراز

Advertisements

8 تبصرے »

  1. amty said

    very nice

  2. Somehow i missed the point. Probably lost in translation 🙂 Anyway … nice blog to visit.

    cheers, Beneficently.

  3. BholiBhali said

    Its a very lovely poem, one of my fav coz I believe Kwaab/Dreams is something that lives within us always and humesha, A life without dreams would be a nightmare… Lovely sharing 🙂

  4. д§mд said

    Thanks a lot all of you for your wonderful words 🙂

  5. فیروز said

    خواب کے متعلق بعض نکات مبالغہ آرا ہیں

  6. فیروز said

    بہرحال بڑی اچھی شاعری ہے

  7. فیروز said

    قارئینِ کرام
    براہ کرم اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور اپنی قیمتی آرا سے نوازئے

  8. فیروز said

    زبان ہے یہ رابطہ کی
    برصغیر ہندوپاک کی
    نام ہے اس کا اردو زبان
    گرم چرچا عالم پر اس کا

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: